Meri Batein Yaad Dila Rahi Hai Mujhy – Ghazal by Hadeed Fatema

The Beam Magazine presents a ghazal – ‘Meri Batein Yaad Dila Rahi Hai Mujhy‘ by Hadeed Fatema.

میرا ماضی جتا رہی ہے مجھے
عکس میرا دِکھا رہی ہے مجھے

وہ حسیں پُر فریب باتیں تری
یاد کیا کیا دِلا رہی ہے مجھے

زندگی طنز کرتے ہوئے ہنس کر
شعر میرے سُنا رہی ہے مجھے

تیری آنکھوں میں دیکھ کر جو کی
اب وہ غلطی رُلا رہی ہے مجھے

مِری آنکھیں جو دِکھ رہی ہیں اُداس
یاد اپنی ہی آ رہی ہے مجھے

مجھ میں اِک جنگ سی چھڑی ہے جو
مجھ میں ہی ہرا رہی ہے مجھے

اُس کی باتوں سے تنگ بھی میں ہی تھا
اُس کی چُپ بھی ستا رہی ہے مجھے

رب سے بھی نہیں رابطہ ہے سہی
نہ ہی دنیا یہ بھا رہی ہے مجھے

غم کو خوشی میں مِلا کر حیات
حدید پاگل بنا رہی ہے مجھے

(حدیؔد فاطمہ)

Mera maazi jata rhi hai mjhe
Aks mera dikha rahi hai mujhe

Wo haseen pur_faraib baten teri
Yaad kya kya dila rahi hai mujhe

Zindagi tanz krty huye hans kr
Sher mery suna rahi hai mujhe

Teri aankhon main dekh kr jo kee
Ab wo ghalti rula rahi hai mujhe

Meri aankhien jo dikh rahi hai udaas
Yaad apni hi aa rahi hai mujhe

Mujh main ik jang si chiri hai jo
Mujh main hi hara rahi hai mujhe

Us ki baaton sy tang b main hi tha
Uski chup bhi sata rahi hai mujhe

RABB sy bhi nahi raabta hai sahi
Na hi dunia yh bha rahi hai mujhe

Gham ko khushi mai mila kr hayat
Hadēed pagal bna rahi hai mujhe

(Hadeed Fatema)

For more English and Urdu poetry available on The Beam Magazine, CLICK HERE.

9 thoughts on “Meri Batein Yaad Dila Rahi Hai Mujhy – Ghazal by Hadeed Fatema”

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

error: Content is protected !!
%d bloggers like this: